گھر میں زعفران اگاکر پونے 12 لاکھ روپے ماہانہ کمانے کا نسخہ

بھارت کے ایک باشندے نے نوئیڈا میں واقع اپنے گھر میں کشمیری زعفران اگانے کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔ 65 سالہ ریٹائرڈ سرکاری افسر رمیش گیرا نے اپنے گھر میں چھوٹے سے رقبے پر زعفران اگاکر ماہانہ ساڑھے تین لاکھ بھارتی روپے (پونے بارہ لاکھ پاکستانی روپے) کمانے کا نسخہ دیا ہے۔
رمیش گیرا نے این آئی ٹی کروک شیترا (ہریانہ) سے الیکٹریکل انجینیرنگ کی ڈگری لینے کے بعد تین عشروں تک کئی ملٹی نیشنل کمپنیوں میں کام کیا۔ اس دوران انہیں وسیع سفر کا موقع بھی ملا۔ اس سے کے نتیجے میں وہ مختلف خطوں کی خصوصیات سے بخوبی واقف ہوگئے۔
2002 میں رمیش گیرا نے جنوبی کوریا میں 6 ماہ قیام کے دوران محدود کاشت کاری کے کئی طریقے (ہائیڈروپونکس، مائیکرو گرینز اور زعفران کی اِن ڈور کاشت کاری) سیکھے۔
دی بیٹر انڈیا سے انٹرویو میں رمیش گیرا نے کہا کہ انہوں نے کاشت کاری کے جدید ترین طریقوں میں دلچسپی لی اور اس حوالے سے تجربے کرنے کا سوچا۔ اس دوران انہیں پتا چلا کہ بھارت اپنی ضرورت کا 70 فیصد زعفران ایران سے درآمد کرتا ہے۔ انہوں نے سوچ لیا کہ ریٹائرمنٹ کے بعد گھر میں زعفران اگانے پر توجہ دیں گے۔
ریٹائرمنٹ کے بعد رمیش گیرا نے 2017 میں 100 مربع فٹ کے کمرے میں زعفران اگانے کا سلسلہ شروع کیا۔ موزوں ماحول پیدا کرنے کے لیے انہوں نے چار لاکھ روپے خرچ کیے۔ کشمیر سے زعفران کے بیج خریدنے پر انہوں نے مزید 2 لاکھ روپے خرچ کیے۔
رمیش گیرا نے بتایا کہ بنیادی سرمایہ کاری ہی کچھ زیادہ ہے۔ اس کے بعد کچھ زیادہ خرچ نہیں کرنا پڑتا اور خطیر آمدنی ہوتی ہے۔ اگر کسی کو برآمدی تجارت کا تجزیہ ہو تو ایک کلو زعفران 6 لاکھ (بھارتی) روپے میں برآمد کرسکتا ہے۔
رمیش گیرا نے دوسروں کو بھی محدود رقبے میں زعفران کاشت کرنا سکھایا ہے۔ اب وہ نوئیڈا میں آکرشک سیفرون انسٹیٹیوٹ چلا رہے ہیں۔ انہوں نے اب تک 370 افراد کو زعفران اگانے کی کامیاب تربیت دی ہے۔ ان کے دو روزہ آن لائن کورس کی فیس بارہ ہزار روپے ہے۔

Views= (516)

Join on Whatsapp 1 2

تازہ ترین