ایم پی اے بلال یاسین پر قاتلانہ حملہ کس نے کرایا؟ شوٹرز کے چونکا دینے والے انکشافات

مسلم لیگ ن کے ممبر پنجاب اسمبلی بلال یاسین پر فائرنگ میں بدنام زمانہ جواریئےکے ملوث ہونے کا انکشاف ہواہے۔
پولیس حکام کے مطابق موہنی روڈ اور شہر کے پوش علاقوں میں جوا کروانے والے بکئے میاں وکی نے بلال یاسین پر قاتلانہ حملہ کروایا
بلال یاسین نےگفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ مجھے پولیس اور مختلف اداروں نے قاتلانہ حملہ کرنے والوں کا بتا دیا ہے، یہ صرف حسد کا معاملہ ہے ۔
پولیس تفتیش کے مطابق میاں وکی شوٹرز کو ٹارگٹ دینے کے بعد وقوعہ سے پانچ روز قبل اپنے اہلخانہ کے ساتھ دبئی فرار ہوا جبکہ ترجمان پنجاب پولیس کے مطابق ملزمان کوگرفتارکرنےکے لیے پولیس کی 16 ٹیمیں تشکیل دی تھیں، سی آئی اے پولیس نے 10 مختلف مقامات پر چھاپے مارے، اس دوران دونوں ملزمان کو شاہدرہ کے علاقے سے خفیہ آپریشن کے بعدگرفتار کر لیا گیا ۔
پولیس کے مطابق میاں وکی نے دیرینہ عداوت پر بلال یاسین پر قاتلانہ حملہ کروایا، پولیس کیس میں اب تک سات ملزمان کو حراست میں لے چکی ہے جس میں اسلحہ کا امپورٹر ساجد ، شوٹرز کو اسلحہ دینے والا افضل پٹھان بھی شامل ہیں ۔
پولیس کے مطابق شوٹرز صرف آئس کے نشے عوض ایم پی اے پر قاتلانہ حملے کے لیے راضی ہوئے، پولیس تفتیش میں انہوں نے بتایا کہ شوٹرز ماجد اور کاشف آئس نشے کے عادی ہیں
شوٹرز کو ان کے گھر والوں نے عرصہ دراز سے گھر سے نکالا ہوا تھا۔ شوٹرز موڑ گھنڈا میں مرغیوں کے گوشت کا کام کرتا تھا۔ گھر سے نکلنے کے بعد میاں وکی کے پارٹنر محسن نے اپنے ڈیرے پر رکھا ہوا تھا۔
پولیس حکام کا کہنا ہے کہ وقوعہ کے روز محسن کے ڈیرے پر بلال یاسین پر حملے کا منصوبہ بنایا گیا، افضل پٹھان نے شوٹرز کو اسلحہ فراہم کیا۔
محسن نے شوٹرز کو بلال یاسین کی حاجی اکرم کے گھر کے باہر موجودگی کی اطلاع دی۔ جواریے میاں وکی کے کہنے پر محسن نے شوٹرز کو بلال یاسین پر حملے کا ٹاسک دیا جبکہ شوٹرز نے حملے سے پہلے بھی آئس کا نشہ کیا اور بلال یاسین پر حملے کے لیے نکلے۔

گروپ جائن کرنے کے لیے کلک کریں (NewsHook) /#/ (NewsHook-2)

اہم خبریں/ تازہ ترین